گیلری

آہیر فیملی پی ٹی آئی کو خیر باد کہنے کو تیار

جوہرآباد (جی نیوز) سابق وفاقی وزیر ملک نسیم احمد آہیروملک حماد ظہور آہیر نے پاکستان تحریک انصاف کو چھوڑنے بارے سنجیدگی سے غور شروع کردیا۔ تفصیلات کے کے مطابق آہیر فیملی جس نے انتہائی بھر پور انداز میں پاکستان تحریک انصاف میں اس وقت شمولیت اختیار کی تھی جب پاکستان مسلم لیگ ن کے رکن صوبائی اسمبلی ملک آصف بھا کی دلچسپی و بھر پور کاوشوں سے جوہرآباد میں کئی دہائیوں سے انتہائی قیمتی 42ایکڑ سرکاری رقبہ پر سے آہیر خاندان کاناجائز قبضہ ختم کروا کر متذکرہ اراضی واگزار کرالی گئی تھی۔اس دوران سابق وفاقی وزیر ملک نسیم آہیر کے صاحبزادے علی آہیر کا قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 70جبکہ ملک حماد ظہور آہیر کا نام صوبائی اسمبلی کے حلقہ پی پی 41سے پی ٹی آئی کے ٹکٹ پر الیکشن میں حصہ لینے کے لیے گردش کرنے لگے تاہم جون کے آخری ہفتے میں ضلع خوشاب کی تاریخ کا میگا کرپشن کیس(ڈاکٹرز کیس) سامنے آگیا جس کے نتیجے میں کئی سینئر ڈاکٹرز گرفتار ہوئے ۔ گرفتار ہونے والے ڈاکٹروں میں آہیر فیملی کا فعال اور بااثر رکن(ملک حماد ظہور آہیر کا بھائی) ڈاکٹر سجادآہیرڈسکٹر سجاد آہیربھی قانون کی گرفت میں آگیا اور تمام تر اثر و رسوخ کے باوجود ڈاکٹر سجاد آہیر کو نہ صرف گرفتاری کے دوران پولیس کی تفتیش کے کڑے عمل سے گزرنا پڑا اور جیل کی ہوا بھی کھانی پڑی (چند روز قبل ہی ڈاکٹر سجاد آہیر ضمانت پر رہا ہوئے ہیں)۔ باخبر ذرائع کے مطابق آہیر فیملی جو 42ایکڑ اراضی کے غیر قانونی قبضے کے صدمے سے گزررہی تھی ، ڈاکٹر سجاد آہیر کی گرفتاری سے شدید دھچکے کا شکار ہوگئی اور اس دوران آہیر فیملی نے جہاں یہ تاثر دینے کی کوشش کی کہ کرپشن کا یہ کیس جھوٹا ہے اور آہیر فیملی کو پی ٹی آئی میں شمولیت کی بناء پر مسلم لیگ ن کی صوبائی حکومت کی جانب سے سیاسی انتقام کا نشانہ بنایا جارہا ہے۔ وہیں پر آہیر فیملی نے تحریک انصاف ضلع خوشاب کی تنظیم سے بھی مددچاہی کہ ڈاکٹر سجاد کی گرفتاری کے خلاف پارٹی کی طرف سے مذمتی بیانات اور احتجاج وغیرہ کیا جائے۔ شروع میں تو تحریک انصاف کی تنظیم نے قدرے محتاط رویہ اختیار کیا لیکن جب آہیر فیملی کی جانب سے حمایت کا مطالبہ شدت اختیار کرنے لگا توپی ٹی آئی ضلع خوشاب کے کنوینئر ملک مسعود کنڈان نے ایک ملاقات میں آصف آہیر جو کہ ملک حماد آہیر

کرپشن کیس کا مدعی ریاض شاہین

کا قریبی عزیز ہے کو واضح طور پر باور کرادیا کہ پی ٹی آئی اس سلسلہ میں آہیر فیملی کے لیے ہرگز ہرگز استعمال نہیں ہو گی کیونکہ ڈاکٹر سجاد آہیر محض ایک سرکاری ملازم ہیں اور انکا پی ٹی آئی سے کو ئی تعلق نہ ہے نیز پی ٹی آئی نے اپنے طور پر ایک رپورٹ بھی مرتب کی جس میں کرپشن کیس میں مسلم لیگ ن کی بادی لنظر میں انتقامی کارروائی نظر نہ آئی بلکہ ضلعی تنظیم نے

ایک مفصل رپورٹ اپنی اعلی قیادت کو بھی ارسال کردی کہ آہیر فیملی کی وجہ سے ضلع خوشاب میں پی ٹی آئی کا امیج بری طرح متاثر ہو رہا ہے۔ذرائع کا دعوی ہے کہ آہیر فیملی تحریک انصاف کے اس روئیہ کی وجہ سے سخت نالا ں ہے اور اسکے اکابرین پی ٹی آئی سے مایوس ہو کر پیپلز پارٹی میں شامل ہونے بارے صلاح مشورے کررہے ہے ہیں۔ یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ کرپشن کے جس مقدمے میں ڈاکٹر سجاد آہیر گرفتار ہوئے تھے

ملک اعجاز حسین آہیر مرحوم

اسکے مدعی ریاض شاہین نامی شخص کا دعوی ہے کہ اسکا تعلق پیپلز پارٹی سے ہے۔یاد رہے

کہ آہیر فیملی کے ملک اعجاز حسین آہیر مرحوم پیپلز پارٹی ضلع خوشاب کے صدر رہے ہیں۔

Advertisements

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s